صفحۂ اول    ہمارے بارے میں    ہمارا رابطہ
پیر 23 جولائی 2018 

منامہ، غیر ملکیوں کیلئے بحرین دنیا بھر میں بہترین ملک قرار

سی پی پی | جمعرات 12 جولائی 2018 

منامہ(سی پی پی )ایک سروے کے مطابق خلیجی ملک بحرین کو غیر ملکیوں کی رہائش ملازمت اور دوستانہ ماحول کے حوالے سے 2017 کا بہترین ملک قرار دِیا گیا۔ غیر ملکیوں کے حوالے سے کروائے گئے ۔سروے کے مطابق غیر ملکیوں کے لیے سازگار ممالک کی فہرست میں بحرین کے بعد لاطینی امریکا کے ممالک میکسیکو اور کوسٹاریکا کا نمبر آتا ہے۔ان تینوں ممالک کی حکومتیں اور باشندے غیر ملکیوں کو خوش آمدید کہنے اور ان کے اپنے ملک میں قیام کے حوالے سے خاصے گرم جوش نظر آتے ہیں۔جبکہ غیر ملکیوں کے لیے غیر موزوں ترین ممالک میں یونان کویت اور نائیجریاسرفہرست ہیں۔ غیر ملکیوں کے لیے بہترین اور بدترین ممالک کے حوالے سے سروے کا انعقاد غیر ملکیوں کی نمائندہ تنظیم انٹر نیشنز کی جانب سے کروایا گیا تھا جو دنیا بھر میں اپنا اثر و رسوخ رکھتی ہے۔اس سروے میں دنیا بھر کے مختلف ممالک میں بسنے والے تیرہ ہزار تارکین وطن سے بات چیت کی گئی۔ جس کے بعد مرتب کیے گئے نتائج کے مطابق غیر ملکیوں کے لیے روزگار رہائش اور دوستانہ ماحول کے حوالے سے بحرین سرفہرست ہے  اس کے بعد کوسٹا ریکا میکسیکو تائیوان پرتگال نیوزی لیند مالٹا کولمبیا سنگاپور اور سپین کے نمبر آتے ہیں۔ دوسری جانب غیر ملکیوں کے لیے دس بدترین ممالک میں یونان کویت نائیجیریا برازیل سعودی عرب اٹلی یوکرائن قطر بھارت اور ترکی سرفہرست ہیں۔ان ممالک میں کیریئر کی ترقی کے امکانات بہت کم ہیں۔ معیار زندگی کو برقرار رکھنے کی مستقل جدوجہد نائیجریا اور کویت میں سب سے بڑا مسئلہ ہے۔ تقریبا 23 فیصد غیر ملکی کویت میں اپنی زندگی سے غیر مطمئن نظر آتے ہیں جبکہ نائیجریا میں انسانی جان کو لاحق شدید خطرات کے باعث غیر ملکی اسے رہائش کے لیے موزوں جگہ نہیں سمجھتے۔ حیران کن طور پر آسٹریلیا میں مقیم غیر ملکیوں نے بھی یہاں قیام پرعدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے ملازمتوں کی کمی کی شکایت کی۔ صرف 54 فیصد غیر ملکی یہاں رہائش پر مطمئن نظر آئے جبکہ 2016 میں یہ شرح 68 فیصد تھی۔

ہمارے بارے میں جاننے کے لئے نیچے دئیے گئے لنکس پر کلک کیجئے۔

ہمارے بارے میں   |   ضابطہ اخلاق   |   اشتہارات   |   ہم سے رابطہ کیجئے
© 2018 All Rights of Publications are Reserved by Daily Subh.
Developed by: SuperWebz.com
تمام مواد کے جملہ حقوق محفوظ ہیں © 2018 روزنامہ صبح۔