صفحۂ اول    ہمارے بارے میں    ہمارا رابطہ
پیر 24 ستمبر 2018 
  • کرپشن کے خلاف ہنگامی بنیادوں پر جہاد ہو گا ، محمود خان
  • اللّٰلہ سے وعدہ ہے کہ کڑا حساب کرونگا ، وزیر اعظم
  • عمران خان شہباز شریف کو شکست دیکر وزیر اعظم بن گئے
  • سردار عثمان بزدار کو وزیر اعلیٰ پنجاب نامزد کر دیا گیا
  • منی لانڈرنگ کیس، عدالت سے آصف زرداری کی گرفتاری کا حکم
  • رائو انوار کی ضمانت منسوخ کروانے کیلئے درخواست دائر

پشاور دھماکہ، تحریک طالبان پاکستان نے ذمہ داری قبول کر لی

نیوز رپورٹر | جمعرات 12 جولائی 2018 

(نیوز رپورٹر)کا لعد م تنظیم تحر یک طا لبا ن ( ٹی ٹی پی ) نے پشاور کے علاقہ یکہ توت میں عوامی نیشنل پارٹی کے صو با ئی رہنما اور انتخا بی امیدو ار ہارون بلور پر ہونے والے خودکش حملے کی ذمہ داری قبول کر لی اور عوام کو وہ خبر دا ر کیا ہے کووہ اے این پی کے دفاتر اور ان کے جلسوں اور کارنر میٹنگز سے دور رہیں۔تحریک طالبان پاکستان کے ترجمان کی جانب سے میڈیا کو جاری کئے گئے بیان میں کہا گیا ہے کہ ٹی ٹی پی کے استشہادی مجاہد عبدالکریم نے گزشتہ رات اے این پی کے اہم رہنماہارون بلور پر فدائی حملہ کیاجس میں وہ مارا گیا۔ہارون بلور اے این پی کے شہید رہنما بشیر بلور کے صا حبز ادے تھے۔بیان میں کہا گیا ہے کہ اے این پی کی اسلام دشمنی کسی سے ڈھکی چھپی نہیں،اور اس سیکولر جماعت نے اپنے دور حکومت میں بہت سے اہل اسلام کو شہید اور پابند سلاسل کیا،جس کی وجہ سے یہ باقاعدہ طور پر مجاہدین کے ہدف پر رہی ہے اور رہے گی جب تک کہ یہ لوگ توبہ تائب ہو کر واپس اسلام میں داخل نہیں ہو جاتے۔بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ اس کے علاوہ ہماری عوام الناس سے بھی گزارش ہے کہ اے این پی کے دفاتر اور ان کے لوگوں سے دور رہیں،کیونکہ ہم پہلے بھی اس با ت کا برملا اعلان جنگ کر چکے ہیں،اس لئے اپنے آپ کو ان کے جلسوں اور کارنر میٹنگوں سے دور رکھیں، وگرنہ نقصان کے ذمہ دار وہ خود ہوں گے۔ بیان کے مطابق پشتون قوم کے ساتھ ہماری کوئی ضد نہیں ہے،لیکن جو بھی ہمارے دشمن کے ساتھ شانہ بشانہ ہوکر محافظ بننے کی کوشش کریں گے،تو پھر ایسوں کو ہم نشانِ عبرت ضرور بنائیں گے ۔

ہمارے بارے میں جاننے کے لئے نیچے دئیے گئے لنکس پر کلک کیجئے۔

ہمارے بارے میں   |   ضابطہ اخلاق   |   اشتہارات   |   ہم سے رابطہ کیجئے
© 2018 All Rights of Publications are Reserved by Daily Subh.
Developed by: SuperWebz.com
تمام مواد کے جملہ حقوق محفوظ ہیں © 2018 روزنامہ صبح۔